مسئول جدیدخانه فرهنگ|درباره ما‎|صفحه اصلی|ايران|اسلام|زبان و ادبيات فارسی|تماس با ما|پيوندها|نقشه سايت
اخبار > 2 اپریل؛ ایران میں یوم "سیزدہ بدر"، جشن نوروز کی الوداعی تقریب


  چاپ        ارسال به دوست

اخبار

2 اپریل؛ ایران میں یوم "سیزدہ بدر"، جشن نوروز کی الوداعی تقریب

یوم فطرت ایران میں "سیزدہ بدر" کے نام سے بھی پہچانا جاتا ہے۔ ایران اور خطے کے بعض ممالک میں نئے سال یا نو روز کا، جشن تیرہ دن تک منایا جاتا ہے اور عام تعطیل ہوتی ہے۔
ان چھٹیوں کا تیرہواں دن منحوس گردانا جاتا ہے اور خاندان کے افراد اس دن گھر چھوڑ کر باہرنکل جاتے ہیں اور پورا دن گھر سے باہر کھانے پینے اور کھیلنے کودنے میں گزار دیتے ہیں اور اس طرح وہ اپنی چھٹیوں کا اختتام مناتے ہیں۔
اسی روز وہ اپنے ساتھ اس سبزہ کو بھی لے جاتے ہیں جنہوں نے نوروز سے پہلے اگایا تھا اور اس سبزہ کو پانی میں بہا دیتے ہیں جو اچھے شگون سے تعبیر کیا جاتا ہے۔
اس موقع پر تہران سمیت ایران بھر کے پارکوں، تفریحی مقامات اور قدرتی وادیوں میں لوگ اپنے اپنے بال بچوں اور گھر کے تمام افراد کے ساتھ پکنک منا رہے ہیں۔
بچے اور نوجوان پارکوں اور باغات میں کھلتے کودتے دکھائی دے رہے ہیں جبکہ بڑے بوڑھے حضرات قالین اور دریاں بچھائے ماضی کے قصے ایک دوسرے سے بیان کرکے لطف اندوز ہورہے ہیں۔
اس موقع پر لوگ طرح طرح کے کھانے تیار کرتے ہیں اور پارکوں ، باغات اور قدرتی وادیوں کے درمیان دسترخوان بچھا کر ان نعمتوں سے لطف اندوز ہوتے ہیں۔ 
نوروز کی تعطیلات کے تیرہویں دن ایرانی عوام کی سیر و تفریح خیر و نیکی کا ایک عالمی پیغام ہے اور اس دن کا جشن اور رسومات کی جڑیں قدیم تاریخ و ثقافت میں پیوست ہیں-
ایرانی عوام یوم فطرت یا نیچر ڈے کی رسومات کو اللہ تعالی کی نعمتوں کی قدردانی سے تعبیر کرتے ہیں اور سبزہ و گل میں دوبارہ جان پیدا ہونے اور بہار کو قیامت و معاد کی نشانی سمجھتے ہیں-


١٠:٠٨ - سه شنبه ١٣ فروردين ١٣٩٨    /    شماره : ٧٢٧٤٧٩    /    تعداد نمایش : ٤٤



خروج




منو اصلی
آمار بازدید
 بازدید این صفحه : 8963 | بازدید امروز : 25 | کل بازدید : 543806 | بازدیدکنندگان آنلاين : 1 | زمان بازدید : 4.1875